حقوق و معاشرتarrowنکاح / طلاقarrowطلاق - وقوع اور عدم وقوع



میں تمھیں طلاق

    سوال:
    ايك ادمي نے مزاق میں اپنی بیوی ميسيج لکھا﴿ميں تمھيں طلاق طلاق﴾ اس کا ارادہ تھا کہ اگے لکھوں گا نھيں ديتا ہوں مگريہ لکھےبغير ہي ميسيج بھيج ديا جلدي ميں اوردوسرےميسيج ميں لکھانھيں ديتا ہوں مذکورہ صورت ميں طلاق واقع ہوگی یا نھيں عمرشجاع کراچی



    • 3172
    • فتوی نمبر
    • Not Defined
    • ملک
    • umarshuja
    • سائل



    جواب:
    صورت مسئولہ میں سائل نے پہلے پیغام میں چونکہ طلاق دینے یا نہ دینے کا لفظ نہیں کہا تھا اس لئے اس سے طلاق واقع نہیں ہوئی اور دونوں کا رشتہ بدستور قائم ہے،تاہم آئندہ اس طرح کے جملے کہنے یا لکھنے سے بہت زیادہ پرہیز کرے۔